bjp_leader-meenakshi_lekhi-bjp-holds-honor-entrusting-supreme_court-against-rahul_gandhi

بی جے پی لیڈر میناکشی لیکھی نے راہول گاندھی کے خلاف سپریم کورٹ میں داخل کی ہتک عزت کی عرضی

بی جے پی لیڈر میناکشی لیکھی نے راہول گاندھی کے خلاف سپریم کورٹ میں داخل کی ہتک عزت کی عرضی

نئی دہلی،12؍اپریل (آئی این ایس انڈیا)

بی جے پی لیڈر اور ممبر پارلیمنٹ میناکشی لیکھی نے کانگریس صدر راہل گاندھی کے رافیل ڈیل کو لے کر دیئے گئے ایک بیان کے خلاف سپریم کورٹ میں ہتک عزت عرضی داخل کی ہے۔سپریم کورٹ میناکشی لیکھی کی عرضی پر سماعت کے لئے بھی تیار ہو گیا ہے۔15 اپریل کو معاملے کی سماعت ہوگی۔لیکھی کا الزام ہے کہ کانگریس صدر راہل گاندھی نے سپریم کورٹ کے حوالے سے یہ بیان دیا ہے کہ سپریم کورٹ نے بھی تسلیم کیا ہے کہ چوکیدار چور ہے۔ اور انہوں نے اسی بیان پر ہتک عزت عرضی داخل کی ہے۔آپ کو بتا دیں کہ رافیل ڈیل کو لے کر کانگریس اور بی جے پی مسلسل آمنے سامنے ہیں۔دونوں جماعتوں کے درمیان الزام تراشیوں کا سلسلہ جاری ہے۔آپ کو بتا دیں کہ 2 دن پہلے ہی رافیل ڈیل کیس میں مرکزی حکومت کو سپریم کورٹ کی جانب سے جھٹکا لگا تھا۔سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت کی ان ابتدائی اعتراضات کو مسترد کر دیا، جس میں حکومت نے درخواست کے ساتھ لگائے دستاویزات پر استحقاق بتایا تھا۔سپریم کورٹ نے کہا کہ رافیل معاملے میں وزارت دفاع سے فوٹوکاپی کئے خفیہ دستاویزات کی جانچ کرے گا۔مرکز نے کہا تھا کہ خفیہ دستاویزات کی فوٹو کاپی یا چوری کے کاپی پر عدالت انحصار نہیں کر سکتا۔یہ فیصلہ سپریم کورٹ کے تین ججوں کی بنچ نے رضامندی سے سنایا ہے۔بتا دیں مرکزی حکومت کی جانب سے کہا گیا تھا کہ دستاویزات درخواست کے ساتھ دیئے گئے ہیں، وہ غلط طریقے سے وزارت دفاع سے لئے گئے ہیں، ان دستاویزات پر عدالت انحصار نہیں کر سکتا۔درخواست گزار ارون شوری نے رافیل نظر ثانی درخواست پر آئے فیصلے پر کہا کہ ہم دستاویزات کی منظوری پر مرکز کے دلیل کو اتفاق رائے سے مسترد کرنے کے حکم سے خوش ہیں۔حکومت نے دعوی کیا تھا کہ 14 دسمبر، 2018 کے کورٹ کے فیصلے پر نظر ثانی کے لئے دئیے گئے دستاویزات پر اس کا استحقاق ہے۔حکومت نے کہا تھا کہ درخواست کی سماعت کے لئے ان دستاویزات پر عدالت نوٹس نہ لے۔سابق وزیر خزانہ یشونت سنہا، صحافی سے لیڈر بنے ارون شوری اور سماجی کارکن-وکیل پرشانت بھوشن کی جانب سے دائر درخواست کو مسترد کرنے کا حکومت نے مطالبہ کیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں