ram_temple-section-370-uniform-civil-code-problem-bjp-manifesto

بی جے پی کے منشور میں پھر رام مندر، دفعہ -370 اور یونیفارم سول کوڈ کا مسئلہ

بی جے پی کے منشور میں پھر رام مندر، دفعہ -370 اور یونیفارم سول کوڈ کا مسئلہ

نئی دہلی ،08؍اپریل (آئی این ایس انڈیا)

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے پیر کو لوک سبھا انتخابات کے لئے اپنا منشور جاری کر دیا ہے۔پارٹی نے اسے ’قراردادخط ‘ کا نام دیا ہے۔خاص بات یہ ہے کہ اس بار بھی بی جے پی نے اپنے منشور میں رام مندر کی تعمیر کا مسئلہ شامل کیا ہے اور مندر کی تعمیر کو لے کر ارادہ ظاہر کیا ہے۔اس کے علاوہ یونیفارم سول کوڈ اور دفعہ 370 کا بھی ذکر ہے۔یہ تینوں ایسے مسائل ہیں، جو طویل عرصے سے پارٹی کے منشور کا حصہ بنتے رہے ہیں۔رام مندر کی تعمیر کا مسئلہ تو بی جے پی کی بنیاد کے ساتھ منسلک ہے۔ پارٹی ہر الیکشن میں اس مسئلے کو اٹھاتی رہی ہے۔2014 میں بھی مندر کی تعمیر کا وعدہ کیا تھا حالانکہ حکومت کی سطح پر کوئی خاص قدم نہیں اٹھایا گیا اور کیس سپریم کورٹ میں زیر التواء ہونے کا حوالہ دیا گیا۔فی الحال سپریم کورٹ نے ثالثی کے ذریعے ایودھیا زمین تنازعہ کے تصفیے کا حکم دیا ہے، لیکن بی جے پی نے آج پھر صاف کر دیا ہے کہ مندر کی تعمیر اس کے ایجنڈے میں شامل ہے۔منشور جاری کرنے کے دوران وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ خوشگوار ماحول میں مندر کی تعمیر ہو۔بی جے پی نے اپنے منشور میں چھوٹے اور معمولی کسانوں کو پنشن دینے کا وعدہ کیا ہے۔60 سال سے اوپر کے کسانوں کو پنشن ملے گی۔ پارٹی کا یہ وعدہ ماسٹر اسٹروک مانا جا رہا ۔چھوٹے اور معمولی کسانوں کے علاوہ بی جے پی نے چھوٹے تاجروں کو بھی پنشن دینے کا وعدہ کیا ہے۔پارٹی کے اس اعلان کو ایک بڑے قدم کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔پارٹی نے مختلف سے آبی وزارت بھی بنانے کا وعدہ کیا ہے۔اس کے علاوہ بی جے پی نے وعدہ کیا ہے کہ کسانوں کو کسان کریڈٹ کارڈ پر ایک لاکھ تک کا جو لون ملتا تھا، اس پر اگلے پانچ سال کے لئے کوئی سود نہیں دینا ہوگا۔ منشور جاری کرنے کے دوران وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ قوم پرستی ہماری حوصلہ افزائی ہے اور گڈ گورننس منتر ہے۔ون مشن، ون ڈائریکشن کو لے کر آگے بڑھنے کا ہدف رکھا ہے۔ایک ہی ڈنڈے سے سب کو ہانکا نہیں کیا جا سکتا، اس لئے سب کو جمع کرنے کی کوشش کی ہے۔ پی ایم مودی نے کہا کہ ہماری کوشش سب کو ساتھ لے کر چلنے کی ہے۔جیسی جہاں ضرورت ہو، اس کے لیے آگے بڑھنا چاہتے ہیں۔پی ایم نے کہا کہ جو کام 50-60 کے عرصے میں ہونا چاہئے تھا، وہ ہمیں 2014 میں کرنا پڑا۔سب کو ساتھ لے کر چلنے کی کوشش ہے۔ترقی کو عوامی تحریک بنائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں