vaccination-baby-death-apply-niloufer_hospital_address-attend_hospital-participant

ٹیکہ لگوانے کے بعدایک بچے کی موت.15؍ بچے نیلوفر دواخانہ میں شریک

ٹیکہ لگوانے کے بعدایک بچے کی موت
15؍ بچے نیلوفر دواخانہ میں شریک

حیدرآباد،7؍مارچ( الہلال میڈیا)

خانگی دواخانوں اور باہر ملنے والی نقلی دواؤں سے تنگ آکر لوگ حکومت کے زیر انتظام ہیلت کئیر سنٹر سے رجوع کرتے ہیں، مگر حکومت کے زیر انتظام دواخانوں میں ڈاکٹروں کی جانب سے غریب عوام کے ساتھ ہونے والی لاپرواہی پر حکومت اور انتظامیہ کو نظر رکھنا چاہئے۔ذرائع کے مطابق اسی طرح کا ایک واقعہ کل نامپلی اربن ہیلٹ کئیر سنٹر میں پیش آیا، بچوں کو ٹیکہ لگانے کے بعد ان میں سے 15؍ بچے شدید طور پر متاثر ہوئے،ان میں15؍ بچوں کونیلوفر دواخانہ میں شریک کردیا گیا،بتایا جا رہا ہے کہ ٹیکہ لگانے کے بعد بچوں کو بخار آنے کے اندیشہ کے پیش نظر جو گولیاں دی جاتی ہیں وہ غلط گولیاں تقسیم دی گئیں جس سے بچے متاثر ہوئے ہیں۔نیلوفر دواخانہ میں شریک بچوں میں تین بچوں کی حالت بہت نازک بتائی جارہی ہے جن کو وینٹی لیٹرلگا دیا گیا ہے، ایک لڑکی کی موت کی بھی اطلاع ملی ہےڈاکٹروں کے مطابق ٹیکہ لگوانے کے بعد بچے گھر وںکو واپس چلے گئے ورنہ حادثہ کو روکاجاسکتا تھا،ریاستی وزیر صحت کے علاوہ دیگر ذمہ داروں نے دواخانہ کامعائنہ کیا ،اور حالات کا جائزہ لیا ہے۔بتایاجاتا ہے کہ ٹیکہ اندازی کے بعد ان بچوں کو بخار سے بچانے کیلئے گولیاں دی گئی تھیں۔اس واقعہ کے بعد متاثرہ بچوں کو مختلف اسپتالوں سے رجوع کیاگیا ۔ان میں 15؍بچوں کو نیلوفر اسپتال میں داخل کیاگیا۔اس واقعہ پر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے زونل کمشنر نے تفصیلات حاصل کیں۔ اس واقعہ کی جانچ کے لئے ڈاکٹرس کی ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔نامپلی اربن ہیلت سنٹر میں گزشتہ روز تقریبا80؍90بچوں کو ٹیکہ دیاگیا۔ان کی عمر تین تا پانچ ماہ ہے۔۔اسپتال کے قریب کسی بھی احتجاج کو روکنے کے لئے احتیاطی اقدام کے طورپر پولیس کی زائد تعداد تعینات کردی گئی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں