disaster-families-alcohol-affected-people

شراب سے ہلاک افراد کے اہل خانہ پر آفتوںکاپہاڑ

شراب سے ہلاک افراد کے اہل خانہ پر آفتوںکاپہاڑ

سہارنپور ،17؍فروری( خاص خبراحمد رضاسہارنپور)

گزشتہ ہفتہ ضلع کے مختلف علاقوںمیں بکنے والی زہریلی شراب کے استعمال کے بعد دم توڑنیوالے افراد کی تعداد مسلسل بڑھتی جارہی ہے ریاستی سرکار ایس ٹی ایف کے ذریعہ جانچ میں سرگرم ہے مگر مہلوکین کے اہل خانہ بڑے صدمہ سے دوچار ہونیکے علاوہ دانہ دانہ کے لئے بھی خد کو بے بس محسوس کر رہے ہیں جس گھر کے سرپرست یعنی کمانے والے ہی چلے گئے انکے اہل خانہ کے سامنے بڑی الجھن آگئی ہے سیکڑوں گھروں میں ایندھن کے ساتھ ساتھ دال روٹی حاصل کرنے کے لئے بھی مشکل کا سامنا ہے انتظامیہ چاہ کر بھی کچھ کرپانے میں ناکام ہے چھوٹی چھوٹی پست برادریوں کے افراد ہی اس زہر کا نشا نہ بنے ہیں دکھ بھی بہوجن سماج پا رٹی، سماجوادی پارٹی اور کانگریس کے قائدین کو ہی ہے انہی کی یہ سیاسی زمین ہے بسپا، سپا اور کانگریسی رہبروں کے سامنے اس دکھ کو بانٹنیکا بڑا مسئلہ پیدا ہوگیاہے یہاں تو برسر اقتدار جماعت کے نمائندے ان ٹھرائے افراد کی باز پرس کے لئے بھی آگے نہی آرہے ہیں یہ مسئل ضلع کے عوام کیلئے بیحد تشویشناک مسئلہ ہے جسکے لئے ہم سبھی کو اپنے مظلوم عوام کا ساتھ دینا لازمی ہوگیاہے؟
اتر پردیش سرکار نے جس ایس آئی ٹی کو زہریلی شراب حادثہ کی جانچ کا ذمہ سونپاہے وہ جانچ ٹیم جہاں بھی پہنچی وہیں ماتم ہی ماتم کا نظارہ دیکھ کر دنگ رہگئی بہوجن سماج پارٹی کے قائد جگپال سنگھ اور دیگر نے موت کا لقمہ بنے سو سے زائد افراد کے اہل خانہ سے گفتگو کی اور ریاستی جانچ ٹیم سے بھی سبھی کو ملوایا مگر مہلوکین کے اہل خانہ ایس آئی ٹیم کی کارکردگی اور خانہ پوری سے سخت ناراض نظر آئے سیکڑوں خواتین نے جانچ ٹیم کو گھیر کر زبردست احتجاج کیا اور سرکاری مشینری اور سرکار کے رویہ پر اپنی سخت ناراضگی کا اظہار کیا عام چرچہ ہے کہ مرکز اور ریاستی سرکار اور اسکے وزراء نے شراب سے ہلاک ہونیوالے افراد کے اہل خانہ سے کسی بھی طرح کی ہمدردی نہی دکھائی محض خان پوری کیجارہی ہے اس واقعہ کو لیکر دلت اور پچھڑے علاقوں میں زبردست غم وغصہ پھیلاہواہے نازک حالات کے مد نظر ریاستی سرکار نے پانچ دن بعد بھی مہلوکین کا درد بانٹنے کی تھوڑی بھی کوشش نہی کی درجنوں گائوں میں موتوں کے سبب سناٹا چھایاہے غریبوں کے سروں سے کمانے والے چلے گئے معصو م بچوں کے سرپر ہاتھ رکھنے والا اور انکو کھانا دینے والا کوئی نہی سبھی لوگ اللہ پر بھروسہ کئے صبر سے گھروں میں دبکے بیٹھے ہیں!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں