up_board_2019-40_days-40_thousand-students-two_days-left-middle

یوپی بورڈ 2019: دو دنوں میں 40 ہزار سے ز ائدطلباء نے درمیان میںامتحان چھوڑ دیا

یوپی بورڈ 2019: دو دنوں میں 40 ہزار سے ز ائدطلباء نے درمیان میںامتحان چھوڑ دیا

لکھنؤ 9 فروری ( آئی این ایس انڈیا )

یوپی بورڈ امتحانات میں برتی گئی سخت نگرانی کا خوش گوار ’نتیجہ‘ سامنے آ گیا ہے۔ امتحان کا انعقاد جمعرات (7 فروری) کو ہوا تھا۔ سخت نگرانی کی وجہ سے اب تک 40 ہزار طلبا نے درمیان میں امتحان چھوڑ دیا ہے۔ یہ کیفیت امتحان کے دوسرے دن تک کی ہے۔ واضح ہوکہ گزشتہ سال بھی یوپی بورڈ میں امتحان میں نقل روکنے کے لئے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ جس کی وجہ سے ہزاروں طلبا نے امتحان چھوڑ دیا تھا ۔ یوپی ثانوی تعلیم کو نسل کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق پہلے دن 20,674 طالب علم شامل ہوئے تھے، جنہوں نے اپنے پیپر لکھنے کی’زحمت‘ تک نہیں کی تھی۔ اتنی تعداد میں طالب علموں کے پیپر میں شامل نہ ہونے پر یوپی بورڈ کی سیکرٹری نینا شریواستو نے کہا کہ اب ہم بالکل صاف نہیں کہہ سکتے کہ طلبا نے سختی یا پھر نقل نہ ہونے کی وجہ سے امتحان درمیان چھوڑدیا ہے۔ واضح ہوکہ گزشتہ سال10,44,619طالب علم میں تقریبا 15 فیصد طلبا ایسے تھے جنہوں نے درمیان میں ہی امتحان چھوڑ دیا تھا ۔ گزشتہ سال بورڈ کے امتحان میں تقریبا 66 لاکھ سے زیادہ طلباشامل ہوئے تھے، لیکن رزلٹ قریب 55 لاکھ طالب علموں کو جاری کیا تھا۔ گزشتہ سال کی طرح اسپیشل ٹاسک فورس (ایس ٹی ایف) کو نقل مافیاؤں کو امتحان مراکز سے دور رکھنے کا کام سونپا گیا ہے۔ہفتہ کو ایک ویڈیو کانفرنس میں ریاست کے وزیر اعلی یوگی نے تمام ضلع مجسٹریٹ اور اسکولوں کے ضلع انسپکٹر کو اس کے خلاف محتاط رہنے کے لیے کہا تھا۔جمعہ کو 10 ویں اور 12 ویں کو زراعت اور موسیقی کا پیپر تھا۔ وہیں اس دن لکھنؤ کے اسکولوں ڈسٹرکٹ انسپکٹر مکیش کمار سنگھ نے لکھنؤ کے اسکولوں کا دورہ کیا۔ انہوں نے امتحان کے دوران عالم باغ علاقہ میں گاندھی انٹر کالج اور دیگر مراکز کا دورہ کیا تھا۔10 ویں -12 ویں کے امتحانات 16 دنوں تک ہوں گے ۔ دسویں بورڈکا امتحان کل 14 دنوں میں مکمل ہوکر 28 فروری 2019 کو ختم ہو گا ، جبکہ 12 ویں بورڈ کے امتحان کل 16 دنوں میں مکمل ہوکر 2 مارچ کو ختم ہوگا۔ حکومت نے نقل روکنے کے سے 1314 امتحان مراکز کو حساس اور 448 امتحان مراکز کو نہایت ہی حساس مرکز قرار دیا ہے ۔ ساتھ ہی ان امتحان مراکز پر نظر بنائے رکھنے کے لئے اسپیشل ٹاسک فورس بھی تشکیل دی گئی ہے ، وہیں سی سی ٹی وی کیمرے کے ساتھ ہر کلاس میں وائس ریکارڈر بھی نصب کئے گئے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں