supreme_court-payment-money-spent-elephant-statues-mayawati-touch-comment

ہاتھی کی مورتیوں پر خرچ پیسے کی ادائیگی سے متعلق سپریم کورٹ کے تبصرہ پر مایاوتی نے کہاعدالت میں اپناموقف رکھیں گے

ہاتھی کی مورتیوں پر خرچ پیسے کی ادائیگی سے متعلق سپریم کورٹ
کے تبصرہ پر مایاوتی نے کہاعدالت میں اپناموقف رکھیں گے

نئی دہلی ،09 ؍فروری (آئی این ایس انڈیا)

سپریم کورٹ کے اس تبصرہ، جس میں کہہ گیا کہ بی ایس پی چیف مایاوتی کو یوپی میں ہاتھیوں کی مورتیوں میں خرچ کئے گئے پیسے کولوٹانا چاہئے، پر مایاوتی کاابتدائی جواب آیا ہے۔ مایاوتی نے اپنے سرکاری ٹوئٹر اکاؤنٹ سے ٹویٹ کرکے کہا ہے کہ وہ اس کیس پر اپنا موقف سپریم کورٹ میں کافی مضبوطی کے ساتھ رکھیں گی۔ دراصل نوئیڈا میں لگی ہاتھی کی مورتیوں کے کیس میں سماعت کرتے ہوئے چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے مایاوتی کے وکیل کو کہا کہ آپ اپنے موکل کو بتا دو کہ انہیں مورتیوں پر خرچ پیسے کو سرکاری خزانے میں واپس جمع کرانا چاہئے۔سپریم کورٹ کے اس تبصرہ کے بعد مایاوتی نے آج صبح ٹویٹ کیا اور اس کیس میں میڈیا کو بھی نصیحت دی۔ انہوں نے لکھا کہ میڈیا برائے مہربانی کرکے معزز سپریم کورٹ کے تبصرے کو توڑ مروڑ کر پیش نہ کرے۔ معزز کورٹ میں اپناموقف ضرور مکمل مضبوطی کے ساتھ آگے بھی رکھا جائے گا، ہمیں مکمل بھروسہ ہے کہ اس کیس میں بھی کورٹ سے مکمل انصاف ملے گا۔ میڈیا اور بی جے پی کے لوگ کٹی پتنگ نہ بنیں تو بہتر ہے۔
دراصل کیس کی سماعت کرتے ہوئے چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے کہا تھا کہ ہمارا خیال ہے کہ میڈم مایاوتی کو مورتیوں کا سارہ پیسہ اپنی جیب سے سرکاری خزانے کو ادائیگی کرنا چاہئے۔ مایاوتی کی طرف سے ستیش مشرا نے کہا کہ اس کیس کی سماعت مئی کے بعد ہو، لیکن چیف جسٹس نے کہا کہ ہمیں کچھ اور کہنے کے لئے مجبور نہ کریں، اب اس کیس میں 2 اپریل کو سماعت ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں