isis-defeated-week-trump

داعش کو ایک ہفتے میں مکمل شکست ہوجائے گی: ٹرمپ

داعش کو ایک ہفتے میں مکمل شکست ہوجائے گی: ٹرمپ

واشنگٹن 8فروری ( آئی این ایس انڈیا )

امریکی صدر ٹرمپ نے پیش گوئی کی ہے کہ داعش کی مکمل شکست صرف ایک ہفتے میں ممکن ہے۔بدھ کو داعش کے خلاف امریکی قیادت میں سرگرم 79 ملکی بین الاقوامی اتحاد کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے دعویٰ کیا کہ شام اور عراق میں داعش کے زیرِ قبضہ باقی ماندہ علاقوں کا کنٹرول بھی ایک ہفتے میں شدت پسند تنظیم سے چھین لیا جائے گا۔امریکی صدر نے کہا کہ داعش کی خلافت صرف چند فی صد علاقوں تک رہ گئی ہے اور امکان ہے کہ آئندہ ہفتے تک اس کی خلافت کے مکمل خاتمے کا اعلان کردیا جائے گا۔حالیہ چند ہفتوں کے دوران کئی امریکی اہلکار یہ دعویٰ کرچکے ہیں کہ داعش شام اور عراق میں ان 5ء 99 فی صد علاقوں سے محروم ہوچکی ہے جو کبھی اس کے قبضے میں تھا۔امریکی حکام کے مطابق داعش کے پاس شام میں وادی فرات کے وسطی علاقے میں پانچ مربع کلومیٹر سے بھی کم علاقہ رہ گیا ہے جہاں اس کے باقی ماندہ سیکڑوں جنگجو محصور ہیں۔لیکن، کئی حلقے یہ خدشہ ظاہر کر رہے ہیں کہ امریکی صدر کی جانب سے شام سے امریکی فوج واپس بلانے کا اعلان قبل از وقت ہے اور امریکی انخلا کی صورت میں داعش کے جنگجو دوبارہ منظم ہوسکتے ہیں۔تاہم، جمعرات کو واشنگٹن ڈی سی میں امریکی محکمہ خارجہ میں بین الاقوامی اتحاد کے نمائندوں کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے دعویٰ کیا کہ داعش کی مکمل شکست بس اب صرف ایک ہفتے کی دوری پر ہے۔ گرچہ ٹرمپ نے اپنے اسٹیٹ آف یونین خطاب میں یہ تسلیم کیا تھا کہ داعش کی باقیات اب بھی ایک خطرہ ہیں، انہوں نے کہا کہ وہ شام سے امریکی فوج کو واپس بلانے کے عزم پر قائم ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں