use-constitutional-organizations-political-purposes-democracy-mohammad_manzoor_alam

آئینی اداروں کا سیاسی مقاصد کے لیے استعمال جمہوریت کے ساتھ مذاق :ڈاکٹر محمد منظور عالم

آئینی اداروں کا سیاسی مقاصد کے لیے استعمال جمہوریت کے ساتھ مذاق :ڈاکٹر محمد منظور عالم

نئی دہلی، 05فروری(آئی این ایس انڈیا)

سی بی آئی ا ور دیگر آئینی اداروں کے تئیں عوام کا اعتماد مسلسل مشکوک ہوتاجارہاہے ۔ایسا لگتاہے کہ سی بی آئی ،آر بی آئی،الیکشن کمیشن ،عدلیہ اور اس جیسے اداروں کو انہیں حاصل شدہ آئینی حقوق سے محروم کرکے حکومت اپنی پالیسی اور اپنے سیاسی فائدہ کے مطابق کام کرنے کیلئے مجبور کررہی ہے ۔ان خیالات کا اظہار آل انڈیا ملی کونسل کے جنرل سکریٹری ڈاکٹرمحمدمنظورعالم نے کیا ۔انہوں نے اپنے بیان میں مزید کہاکہ موجودہ حکومت میں سی بی آئی جیسی جانچ ایجنسی سب سے ز یادہ موضوع بحث ہے ۔حکومت کردار پر مسلسل سوال اٹھ رہاہے ۔گذشتہ دنوں سی بی آئی آپس میں لڑرہی تھی ا ور اب ایسا احساس ہے عوام کہ حکومت اپنی سیاسی بالادستی قائم کرنے کیلئے اسے صحیح سے کام نہیں کرنے دے رہی ہے اورسیاسی مخالفین کے خلاف اس کا غلط استعمال کررہی ہے ۔ اپوزیشن کوتنگ کرکے عوام کے درمیان اس کی شبیہ خراب بنانا چاہتی ہے۔ڈاکٹر محمد منظورعالم نے کہاکہ سی بی آئی ،عدلیہ ،آر بی آئی اور اس جیسے اداروں حکومت کی پالیسیوں سے آزاد ہوتے ہیں ،آئین میں ان کیلئے علاحدہ دستور اور اصول ہیں ۔ انہیں مکمل آزادی اور اختیارات حاصل ہے تاہم ایسالگتاہے کہ اب یہ جمہوری ادارے جمہوریت کے ساتھ عوام کیلئے کام کرنے کے بجائے حکومت کے دبائو میں حکومت کیلئے کام کررہے ہیں ۔

کیٹاگری میں : هوم

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں