jamiat_ulama_hind_narmal-remember-collector-against-vasim_rizvi-anti_islam_statement

جمعیۃ علماء ہند نرمل کی جانب سے وسیم رضوی کے مداس مخالف زھریلے بیان کے خلاف کلکٹر کو یاد داشت

جمعیۃ علماء ہند نرمل کی جانب سے
وسیم رضوی کے مداس مخالف زھریلے بیان کے خلاف کلکٹر کو یاد داشت

نرمل،5؍فروری(مولانا احسان شاہ قاسمی نامہ نگارالہلال میڈیاگروپ)

جمعیۃ علماء ہند (ارشد مدنی) نرمل کے ایک وفد کی جانب سے آج بتاریخ 5 فروری بروزِ منگل، وسیم رضوی کے مداس مخالف زھریلے بیان کے خلاف کلکٹر ضلع نرمل: پرشانتی کو میمورنڈم پیش کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ:*یہ ایک نا قابلِ انکار حقیقت ہے کہ’’اسلامی مدارس‘‘ملتِ اسلامیہ کی آبرواور امتِ مسلمہ کی دھڑکن ہیں۔جہاں ملک دوستی کی تعلیم دی جاتی ہے،امن پسندی کا درس دیا جاتا ہے،ملک و ملت کے تحفظ کا طریقہ سکھایا جاتا ہے۔یہی وہ مدارس ہیں جہاں سے انگریزوں کے خلاف’’ہندوستان چھوڑو‘‘تحریک شروع ہوئی،اور باشندگانِ وطن کو سکون و راحت کی سانس نصیب ہوئی،آزادئ ہند کی پوری تاریخ ،مدارس اسلامیہ کے ’’قائدانہ کردار‘‘سے لالہ زار ہے،لیکن افسوس کہ آج اِن ہی مدارس کو بنیاد پرستی اور ملک دشمنی کا طعنہ دیا جارہا ہے،اِن انسانیت نوازاداروں کو تشدد پسندی اور دہشت گردی کا اڈہ بتایا جارہا ہے۔چنانچہ چند دن پہلے شیعہ وقف بورڈ لکھنؤ کے چیرمین وسیم رضوی نے دینی مدارس کو آئی یس آئی یس کا گڑھ بتلاکر ملک میں موجود ہزاروں مدارس کے بے شمار افراد کے جذبات کو مجروح کیا ہے ، جمعیۃ علماء ہند نرمل نے وسیم رضوی کے اس بیان کو ملک کی پر امن فضا کو مکدر کرنے والا قرار دیتے ہوئے حکومتی اداروں کے ذمہ داروں سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ وسیم رضوی جیسے افراد کے خلاف سخت کاروائی کریں ورنہ ملک کا پرامن ماحول خراب ہوسکتا ہےاس موقع جمعیۃ علماء ہند نرمل کے ذمہ داران : مفتی کلیم الدین قاسمی (صدر) ،مفتی عبد العلیم فیصل قاسمی (جنرل سکریٹری)، مفتی احسان شاہ قاسمی صراط مستقیم ویلفیئر سوسائٹی، حافظ آصف ،مولانا قاسم رحمانی ،عبدالرحمان مدینہ ہوٹل، مولوی انور کے علاوہ نرمل کے دینی مدارس کے ذمہ داران : خواجہ یوسف احمد معتمد مدرسہ روضۃ العلوم،مفتی ریاض الدین انصاری ناظم عائشہ للبنات،مفتی حسان عبد الرشید خان ناظم دارالعلوم زکریا ودیگر موجود تھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں